پاکستان میں توانائی کا منظر

پاکستان کی بڑھتی ہوئی آبادی اور گرتی ہوئی معیشیت کی وجہ سے توانائی کی مانگ میں اضافہ ہوا ہے۔ اسی وجہ سے توانائی کی قلت کا ملک کو سامنا کرنا پڑتا ہے۔ 2007 سے اس بحران نے شدت اختیار کر لی ہے۔ مانگ میں اضافے اور محدود پیداوار کی وجہ سے ملک کو طویل گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ 2008 میں ڈیمانڈ سے بجلی کی دستیابی پندرہ فیصد کم تھی۔ ناکافی پیداوار کی وجہ غیرموٴثر بجلی گھر، غیرمعیاری ٹرانسمیشن نظام، بجلی کا غیرمناسب استعمال اور سرکلر ڈیٹ ہے۔ بجلی کی مانگ اور پیداوار میں فرق چھ ہزار میگاواٹ تک پہنچ چکا ہے۔ جس کی وجہ سے صنعتی ترقی اور زرعی پیداوار متاثر ہو رہی ہے۔
شارٹ ٹرم اقدامات کی بنیاد ایندھن پر چلنے والے بجلی گھروں پر رکھی گئی۔ جس کی وجہ سے توانائی کی قیمت نے ملک کی معیشیت پر اثراندز ہونا شروع کر دیا اور ملک میں ایندھن کی درآمد بڑھ گئی۔ مہنگی بجلی سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لیے لازمی ہے کہ پاکستان میں موجود متبادل وسائل سے استفادہ کیا جائے۔ تقریباً 34600 میگاواٹ بجلی ہوائی وسائل سے پیدا کی جا سکتی ہے۔ اس شعبہ کو فروغ دینے کے لیے حکومت نے ایک موٴثر پالیسی تیار کی ہے۔
موجودہ بجلی کی پیداوار
  • بجلی کی کُل پیداوار: 19505 میگاواٹ (2007)

بجلی کے زرائع:

  • ایندھن :۔ 12580 میگاواٹ (65 فیصد)
  • ہائیڈرو :۔ 6463 میگاواٹ (33 فیصد)
  • نیوکلر :۔ 462 میگاواٹ (2 فیصد)
  • قابل تجدید :۔ 0 میگاواٹ
بڑھتی ہوئی مانگ
پاکستان میں بجلی کی سپلائی اور ڈیمانڈ
  سپلائی اور ڈیمانڈ 2008 - 2020 (میگاواٹ)
 2008200920102011201220132014201520162017201820192020
موجودہ پیداوار15,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,90315,903
تجویز کردہ پیداوار5304,2357,22610,11510,55613,30713,52014,60716,13418,44818,44818,44818,448
کُل موجودہ پیداوار16,48420,13823,12926,01826,45929,21029,42330,51032,03734,35134,35134,35134,351
متوقع پیداوار13,14616,11018,50320,81421,16723,36823,53824,40825,63027,48127,48127,48127,481
ڈیمانڈ (سمر پیک)16,48417,86819,35220,87422,46024,12625,91928,02930,22335,50434,91837,90741,132
سرپلس ؍ ڈیفیسٹ پیداوار-3,338-1,758-849-60-1,293-758-2,381-3,621-4,593-8,023-7,437-10,426-13,651